سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی

پاکستانی نوجوان کی لندن میں گمشدہ والٹ کے مالک کو ڈھونڈنے کی کہانی سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی تیمور غازی نے سڑک پر ملے والٹ کے مالک کو سوشل میڈیا کے ذریعے ڈھونڈ نکالا،طویل سفر کرکے بھارتی نوجوان راہول کے دفتر پہنچ گیا،دونوں ممالک کے صارفین کو گمشدہ والٹ کے مالک کے سراغ لگانے کی

 

 

 

 

 

کہانی بھا گئی لندن ( 31 جولائی 2021ء) : پاکستانی نوجوان کی لندن میں گمشدہ والٹ کے مالک کو ڈھونڈنے کی کہانی سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی، جی ہاں سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایک نوجوان کی کہانی نے لوگوں کے دل جیت لیے جس میں بتایا گیا کہ کیسے وہ لندن میں ایک ایسے شخص کو اس گمشدہ والٹ واپس کرنے میں کامیاب ہوا جس کو وہ جانتا تک نہیں تھا۔ غازی تیمور نامی پاکستانی نوجوان نے والٹ کے مالک کا سراغ لگانے سے متعلق ساری کہانی ٹویٹر پر بھی شئیر کی جسے صارفین نے خوب پسند کیا۔غازی تیمور نے والٹ کی تصویر ٹویٹر پر شئیر کرتے ہوئے بتایا کہ اسے یہ والٹ ملا ہے،بینک کارڈ پر دی گئی تفصیلات کے مطابق یہ کسی راہول نامی شخص کا ہے،راہول کو ڈھونڈنے کا وقت آ گیا ہے۔ گوگل پر سرچ کرنے سے معلوم ہوتا ہے کہ راہول کا تعلق بھارت کے شہر گجرات سے ہے۔گوگل سرچ کے مطابق راہول کے نام سے موجود آئی ڈیز گجرات کی ہیں لیکن ضروری نہیں یہ وہی راہول ہو۔ اگلے چند ٹویٹس میں غازی تیمور نے ٹویٹر پر بتایا کہ راہول کو فیس بک یا انسٹاگرام پر ڈھونڈنے میں کامیاب نہیں ہوا۔  غازی تیمور نے بتایا کہ ابھی ابھی لنکڈ ان پر سرچ کیا ہے جس سے راہول کے نام سے تین آئی ڈی ملے جن میں سے ایک لندن میں کام کرتا ہے۔ لیکن اسے پروفائل پرائیویسی کی وجہ سے میسج نہیں کرپا رہا،انہیں درخواست بھیج دی ہے جو شاید وہ قبول نہ کرے۔ ۔ پروفائل کے مطابق راہول فوڈ اینڈ بیوریج کمپنی

 

 

 

 

 

میں کام کرتا ہے۔میں اب ان کے ہیڈ آفس سے رابطہ کروں گا۔ تیمور غازی نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ عجیب کمپنی ہے – نہ ان کا پتہ گوگل پر ہے اور نہ ہی ان کی ویب سائٹ پر۔ کسٹمر سروسز کو فون کیا ، وہاں بھی کوئی نمبر نہیں۔ آخرکار غازی تیمور نے ایک اور ٹویٹ میں اچھی خبر سناتے ہوئے کہا کہ کمپنی ہاؤس پر دائر کردہ ان کے سالانہ اکاؤنٹس کا پتہ ملا۔ میں راہول سے ایک قدم قریب ہوں۔  راہول کے آفس جاتے ہوئے غازی تیمور نے ایک اور ٹویٹ میں کہا کہ میں سوچ رہا ہوں کیا وہ جانتا ہے کہ ہم اس طرح سے ملنے جا رہے ہیں؟ کیا وہ دوستی کی یہ کاوش قبول کرے گا؟ کیا راہول فیمینسٹ ہو گا؟

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.