اب کہو عمران خان کچھ نہیں کررہا ۔۔۔ تحریک انصاف نے صرف پچھلے 3 ماہ میں پاکستان پر واجب الادا کتنا قرضہ اتار دیا ؟ رپورٹ سامنے آگئ

اب کہو عمران خان کچھ نہیں کررہا ۔۔۔ تحریک انصاف نے صرف پچھلے 3 ماہ میں پاکستان پر واجب الادا کتنا قرضہ اتار دیا ؟ رپورٹ سامنے آگئ اسلام آباد(نیوز ڈیسک) پاکستان کی ترقی کی شرح بہت کم ہے اس کی بنیادی وجہ ملکی قرضے ہیں زرمبادلہ کی کثیر رقم قرضوں کی ادائیگی کی مد میں چلی جا تی ہے جبکہ باقی

 

 

 

 

 

ماندہ رقم سے ملکی ضروریات کو پورا نہیں کیا جا سکتا تاہم پاکستان تحریک انصاف حکومت قرضوں کا بوجھ کم کرنے کے لئے بھرپور کوشاں ہے۔تحریک انصاف کی حکومت نے 3 ماہ کے دوران 522 ارب روپے کا قرضہ واپس کر دیا، رواں مالی سال کی دوسری سہ ماہی میں قرضوں میں 522 ارب روپےکی کمی ہوئی، تاہم ملک پرقرضوں کا مجموعی بوجھ 40ہزار 993ارب روپے ہوگیا۔ تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک کی جانب سے ملک کے کل قرضوں کے حجم کے حوالے سے رپورٹ جاری کی گئی ہے۔ اسٹیٹ بینک کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ڈیڑھ سال میں ملکی قرضوں میں11ہزار114ارب روپےکا اضافہ ہوا جبکہ ملک پرقرضوں کا مجموعی بوجھ 40ہزار993ارب روپے ہوگیا۔ مرکزی بینک کی رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ رواں مالی سال کی دوسری سہہ ماہی میں قرضوں کے بوجھ میں کمی دیکھنے میں آئی۔ مالی سال کی دوسری سہ ماہی کے دوران قرضوں میں 522 ارب روپےکی کمی ہوئی ہے۔ اسٹیٹ بینک کی جانب سے مرتب کی گئی رپورٹ وفاقی حکومت کے حوالے کر دی گئی ہے۔ اس حوالے سے حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈیڑھ سال میں ملکی قرضوں میں11ہزار114ارب روپے کے اضافے میں زیادہ تر حصہ روپے کی قدر میں کمی کی وجہ سے ہے۔ جبکہ معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ ملک پر واجب الادا قرضوں کا بوجھ خطرناک سطح پر پہنچ چکا ہے۔ حکومت مالی سال کے دوران جتنا بھی پیسہ اکٹھا کرتی ہے، وہ قرض اور اس کے سود کی ادائیگی میں خرچ ہو جاتا ہے، یوں اب حکومت کو ہر سال تقریباً 4 ہزار ارب روپے کے خسارے کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.