بجلی کا شارٹ فال ختم! وفاقی حکومت نے بڑا قدم اُٹھا لیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) ملک کے کسی علاقے میں بجلی کا کوئی ‏شارٹ فال نہیں رہا، وفاقی حکومت نے 1796 میگاواٹ سے زائد بجلی پیدا کرنے والے 6 پاور پلانٹس بند کرنے کا اعلان کر دیا- ت فصیلات کےمطابق وزارت توانائی نے ایوان کو بتایا ہے کہ وفاقی حکومت نے 6 پاور پلانٹس کی بندش کافیصلہ کر لیا ‏ہے۔

 

 

 

 

 

قومی اسمبلی کے وقفہ سوالات میں وفاقی وزیرحماد اظہر نے کہا کہ ملک میں بجلی کا کوئی ‏شارٹ فال نہیں جن علاقوں میں زیادہ بجلی چوری ہورہی ہےوہاں لوڈشیڈنگ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹرانسمیشن ایشوزکی وجہ سےبھی بعض علاقوں میں مسائل درپیش ہیں 2سے3سال ‏میں 4ہزار میگاواٹ ٹرانسمیشن کیپسٹی کوبڑھایاگیا اگلےایک سال میں3ہزارٹرانسمیشن کیپسٹی ‏کوبڑھائیں گے۔ وزارت توانائی نے جواب دیا کہ وفاقی حکومت نے 6 پاور پلانٹس کی بندش کافیصلہ کر لیا ہے بند ‏کئے جانے والے 6 پاور پلانٹس سے1796میگا واٹ بجلی کی کمی ہوگی، لاکھڑا،کوٹری پاورپلانٹس ‏نیپراسےلائنسنس منسوخی پرغیرفعال ہیں۔ وزارت نے بتایا کہ موجودہ حکومت نے 3 ہزار میگا واٹ بجلی کی پیداوار میں اضافہ کیا ہے۔ وزارت سائنس وٹیکنالوجی نے قومی اسمبلی اجلاس میں جواب دیا کہ 2020اور 2021 میں 28 ‏شہروں کا پانی تجزیے میں غیرمحفوظ پایاگیا جب کہ ملک کے29 شہروں کا پانی محفوظ پایا گیا، ‏بہاولپور کا پانی 76 فیصد غیرمحفوظ پایاگیا ہے۔ جواب میں کہا گیا ہے کہ پانی میں آرسینک کی موجودگی سےمثانہ اور پھیپھڑوں کاکینسرہوسکتاہے، ‏آرسینک جلد کا رنگ خراب کرنے اور زخم بننےکاسبب بن رہاہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ دنوں اپنے ایک بیان میں وفاقی وزیر حماد اظہر نے کہا تھا کہ حکومت نے بجلی کے کمزور ترسیلی نظام کو ٹھیک کرکے بحران پر قابو پا لیا، ملک میں کہیں بھی لوڈشیڈنگ نہیں ہو رہی- وفاقی وزیر برائے توانائی حماد اظہر نے دعویٰ کیا کہ اس وقت کہیں بھی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نہیں ہو رہی ہے۔وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات فواد چودھری اور وزیراعظم کے مشیر برائے احتساب شہزاد اکبر کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف سے تعلق رکھنے والے وفاقی وزیرحماد اظہر نے کہا کہ ترسیلی نظام میں4 ہزارمیگاواٹ کا اضافہ کیا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.