شاہ رخ خان کے بیٹے کی قسمت کافیصلہ ہوگیا۔۔ عدالت کے فیصلے نے کنگ خان کے اہلخانہ پر پربجلیاں گرادیں، مداح بھی حیران وپریشان

بھارتی اداکارشاہ رخ خان کے بیٹے آریان کو ممبئی کی عدالت نے مزید 14 دن کے عدالتی ریمانڈ پر جی، ل بھیج دیا۔آریان کو بھارتی نارکوٹکس کنٹرول بیورو نے ہفتہ2 اکتوبرکی شب خفیہ اطلاع پرممبئی کی بندرگاہ پرکروز شپ میں ہونے والی پارٹی پر چھاپے کے دوران گرفتار کیا تھا۔این سی بی نے آریان کو ساتھیوں سمیت 4

 

 

 

 

اکتوبر کو عدالت میں پیش کرکے 7 اکتوبرتک جسمانی ریمانڈ حاصل کیا تھا جوگزشتہ روزختم ہونے پرانہیں دوبارہ عدالت میں پیش کیا گیا۔آریان کے علاوہ دیگر  7 ملزمان میں منمون دھمیچا ، اربازمرچنٹ ، اسمیت سنگھ ، موہک جسوال ، گومیت چوپڑا ، نوپو سریکا اور وکرانت چھوکر شامل ہیں۔عدالت نے شاہ رخ خان کے بیٹے اورساتھیوں کو 11 اکتوبر تک جسمانی ریمانڈ پر حوالے کرنے کی درخواست مسترد کرتے ہوئے انہیں ریمانڈ پر جی، ل بھیج دیا۔عدالتی ریمانڈ ختم ہونے پر ملزمان کو نارکوٹکس کےمعاملات دیکھنے والی خصوصی عدالت این ڈی پی میں پیش کیا جائے گا۔دوران سماعت آریان خان کے وکلا نے ان کا بیان پڑھ کر سنایا۔ شاہ رخ خان کے بیٹے نے کہا کہ انہیں غلط فہمی کی بنیاد پرگرفتارکیا گیا، من، شی، ات استعمال کرنے والے دیگرساتھیوں کے ساتھ صرف موبائل فون پرچیٹ کی تھی۔آریان خان گرفتاراربازمرچنٹ سمیت دیگر لوگوں سے دوستی اورتعلقات کا اعتراف کرتے ہوئے اس بات سے انکار کیا کہ وہ من، شی، ات کا استعمال یا اسمگل کرتے رہے ہیں۔ہندوستان ٹائمزکے مطابق ملزمان کے کرونا ٹیسٹ کرنے کے بعد انہیں جی، ل منتقل کیا جائے گا۔ آریان خان کے وکلاء نے عبوری ضمانت کی درخواست دائر کررکھی ہے جس پر 8 اکتوبر کو سماعت ہوگی۔رپورٹ کے مطابق نارکوٹکس فورس کے وکلا نےعدالت کو بتایا کہ ملزمان سے 3 روزہ تفتیش میں کئی انکشافات سامنے آئے جن کی بناء پر مزید گرفتاریاں کی گئیں۔خبر

 

 

 

 

رساں ادارے ایشین نیوز انٹرنیشنل کی ٹویٹ کے مطابق ‘ کیس میں نائیجرین باشندے سمیت کل 18 ملزمان کو گرفتار کیا ہے جس سے ایکسٹیسی کی 40 گولیاں بھی برآمد کی گئیں’۔آریان پیشی اور سماعت کے وقت ان کے والد شاہ رخ خان اوروالدہ گوری خان کمرہ عدالت میں موجود نہیں تھے۔اس سے قبل بھارتی میڈیا میں دعویٰ کیا گیا تھا کہ شاہ رخ کی آریان سے ملاقات ہوئی اور گرفتاری کے بعد والد سے پہلی ملاقات میں آریان جذبات پر قابو نہ رکھتے ہوئے رو پڑے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *