ورلڈ کپ کے ہنگامے کے دوران کرکٹر کا ایسا کام کہ ٹیم سے نکال دیا گیا ، پاکستانی مداحوں کو بڑا دھچکا لگ گیا

ورلڈ کپ کے ہنگامے کے دوران کرکٹر کا ایسا کام کہ ٹیم سے نکال دیا گیا ، پاکستانی مداحوں کو بڑا دھچکا لگ گیا ۔۔۔ ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے دوران ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ سے پہلے “بلیک لائیوز میٹر” تحریک سے اظہارِ یکجہتی کیلئے ایک گھٹنا نہ ٹیکنے والے جنوبی افریقہ کے وکٹ کیپر بلے باز کوئنٹن ڈی کوک نے اب

 

 

 

 

گھٹنوں کے بل ہی آگرے۔ بلے باز نے معافی مانگتے ہوئے وضاحت جاری کی ہے کہ وہ نسل پرست نہیں ہیں۔ ٹی 20 ورلڈ کپ میں شامل ٹیموں کی جانب سے سیاہ فاموں کے ساتھ نسلی امتیاز کے خلاف شروع ہونے والی تحریک “بلیک لائیوز میٹر” کے ساتھ اظہارِ یکجہتی کیا جا رہا ہے۔ میچ شروع ہونے سے پہلے ٹیموں کے کھلاڑی ایک گھٹنے کے بل بیٹھ کر سیاہ فام نسل پرستی کے خلاف تحریک کی حمایت کرتے ہیں۔ ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ کے دوران کوئنٹن ڈی کوک نے گھٹنے کے بل بیٹھنے سے انکار کردیا جس کے بعد انہیں میچ میں شامل نہیں کیا گیا ۔اس معاملے کے بعد وہ واپس جنوبی افریقہ چلے گئے جہاں انہوں نے اپنا معافی نامہ جاری کیا ہے۔ وکٹ کیپر بلے باز کا کہنا ہے کہ ایسا نہیں ہے کہ وہ نسل پرست ہیں بلکہ وہ نسلی امتیاز کے خلاف ہیں۔ ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ سے پہلے اس حوالے سے کوئی مشاورت نہیں ہوئی تھی بلکہ جب کھلاڑی گراؤنڈ میں جانے لگے تو اچانک فیصلہ سنایا گیا کہ تمام کھلاڑی ایک گھٹنے پر بیٹھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ان کے ایکشن سے کسی کی دل آزاری ہوئی ہے تو وہ اس پر معافی مانگتے ہیں، ان کیلئے اپنے ملک کیلئے کھیلنے سے بڑھ کر کوئی چیز نہیں ہے، اگر انہیں ٹیم میں رکھا جاتا ہے تو انہیں اپنے ملک کی نمائندگی کرنے میں خوشی ہوگی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.