پاکستانیوں کی مشکل آسان ہو گئی

متحدہ عرب امارات جانے والے پاکستانیوں کی مشکل آسان ہو گئی اسلام آباد( 13 اگست 2021ء ) متحدہ عرب امارات جانے والے پاکستانیوں کی مشکل آسان ہو گئی۔میڈیا رپورٹ کے مطابق متحدہ عرب امارات جانے والے مسافروں کے لیے 7 ایئرپورٹس پر ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کی سہولت فراہم کر دی گئی۔سول ایوی ایشن کے

 

 

 

 

 

جاری کردہ نوٹیفیکیشن کے مطابق کراچی ، اسلام آباد،لاہور، پشاور، فیصل آباد، ملتان اور کوئٹہ انٹرنیشنل ائیرپورٹ پر ٹیسٹ کے لیے جگہ فراہم کر دی گئی ہے۔کراچی ائیرپورٹ پی پی آئی اے کے ریزرویشن آفس میں سندھ لیب ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کرے گا۔ائیرپورٹس پر فراہم کردہ جگہ پر ائیرلائنز کی طرف سے متعلقہ لیبارٹیرز مسافروں کے پی سی آر ٹیسٹ کریں گی۔سول ایوی ایشن نے این سی او سی کو وزارت صحت سے ٹیسٹ کے چارجز کا تعین کرنے کی بھی درخواست کی،چارجز میں رعایت ہونے سے مسافروں کو ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ کا اضافی مالی بوجھ نہیں اٹھانا پڑے گا۔ریپڈ پی سی آر ٹیسٹ سے یو اے ای جانے والے مسافروں کی مشکلات میں کمی ہو گی۔واضح رہے کہ متحدہ عرب امارات کی جانب سے 5 اگست 2021ء بروز جمعرات پاکستان سمیت متعدد ممالک کے ان مسافروں کو واپس آنے کی اجازت دے دی ہے جو کئی ماہ سے فضائی سفر کی پابندی کے باعث اپنے ملک میں ہی پھنس کر رہ گئے تھے۔ اس خوش خبری سے پاکستان میں پھنسے ہزاروں اماراتی ویزہ ہولڈر کو بھی خوش کر دیا تھا۔تاہم جب یہ پاکستانی مسافر واپس جانے کے لیے کراچی، لاہور اور اسلام آباد کے ایئرپورٹس پر پہنچے تو انہیں شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ ایئرپورٹ حکام نے بتایا ہے کہ اماراتی حکومت کی جانب سے پرواز سے 4 گھنٹے مسافروں کا پی سی آر ریپڈ Antigen ٹیسٹ لینے کی شرط عائد کی گئی ، تاہم اس ٹیسٹ کی پاکستانی

 

 

 

 

 

لیبارٹریز میں سہولت موجود نہیں تھی۔ اس وجہ سے ایمریٹس اور فلائی دُبئی نے پاکستانی مسافروں کو امارات لے جانے سے انکار کر دیا تھا۔۔ واضح رہے کہ امارات روانگی کی پرواز میں سوار ہونے سے قبل مسافروں کے پاس پی سی آر ٹیسٹ کی نیگیٹو رپورٹ ہونا لازمی ہوگا جسے روانگی کے وقت جاری ہوئے 48 گھنٹے سے زائد ووقت نہ گزرا ہو۔ یہ ٹیسٹ رپورٹ منظور شدہ لیبارٹری سے ہونا ہے جس کی ویریفیکیشن کے لیے اس پر QR کوڈ ہونا بھی ضروری ہوگا۔ جہاز میں سوار ہونے سے قبل چار گھنٹے پہلے تک مسافروں کا ریپڈ کورونا ٹیسٹ بھی ہوگا۔ صرف وہی مسافر امارات واپس آ سکیں گے جن کے پاس کارآمد رہائشی ویزہ ہو گا اور ویکسین کی دونوں خوراکیں لگانے کا سرٹیفکیٹ بھی موجود ہوگا۔ سفر کے وقت دوسری خوراک حاصل کیے کم از کم چودہ روز گزر جانا لازمی ہوگا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.