15 نومبرکو بڑاتحفہ۔۔کیا ہونے جا رہا ہے؟ بڑی خوشخبری سنا دی گئی

سنٹرل ڈائریکٹوریٹ آف نیشنل سیونگز حکومت پاکستان کی جانب سے جاری کئے جانے والے 100 اور 1500 روپے مالیت کے انعامی بانڈزکی قرعہ اندازی 15 نومبر کو ہو گی ۔ 100 روپے مالیت کے سٹوڈنٹس بانڈز کا پہلا انعام 7 لاکھ روپے کا ایک ، دوسرا انعام 2 لاکھ روپے مالیت کے تین اور تیسرا انعام ایک ہزار روپے مالیت کے 1199 انعامات ہوں گے ۔ 1500 روپے

 

 

 

کے قومی انعامی بانڈز کی کا پہلا انعام 30 لاکھ روپے کا ایک ، دوسرا انعام 10 لاکھ روپے کے 3 اور تیسرا انعام 18500 روپے مالیت کے 1696 انعامات ہیں جبکہ دوسری جانب سندھ ہائی کورٹ نے 5منٹ سے لمبی کال پر عائد فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی ختم کرنے کا حکم دے دیا۔ ایکسپریس ٹربیون کے مطابق وفاقی حکومت کی طرف سے موبائل فون صارفین پر 75پیسے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی عائد کی تھی جو ہر 5منٹ سے زیادہ ہونے والی کال پر لاگو ہوتی تھی۔ عدالت عالیہ سندھ نے اپنے فیصلے میں ٹیلی کمیونی کیشن سروسز کے شعبے میں وفاق اور سندھ حکومت کے دائرہ اختیار کا معاملہ بھی طے کر دیا ہے۔ عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ آئین کے تحت ٹیلی کمیونی کیشن سروسز صوبائی حکومت کے دائرہ اختیار میں آتی ہیں لہٰذا وفاق کو ان پر ٹیکس لاگو کرنے کا کوئی اختیار حاصل نہیں ہے۔ رپورٹ کے مطابق وفاقی کی طرف سے عائد اس ڈیوٹی کے خلاف تین ٹیلی کمیونی کیشن کمپنیاں ’پاکستان موبائل کمیونی کیشن لمیٹڈ، پاک ٹیلی کام موبائل لمیٹڈ اور ٹیلی نار پاکستان‘ نے سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کیا تھا۔ واضح رہے کہ فنانس بل میں مشیر خزانہ شوکت ترین نے ہر ایس ایم ایس پر 10پیسے، ہر 3منٹ سے طویل کال پر 1روپیہ اور ہر ایک جی بی انٹرنیٹ پر 5روپے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی لاگو کرنے کی تجویز دی تھی تاہم شدید عوامی ردعمل کے سبب ایس ایم ایس اور انٹرنیٹ پر یہ ڈیوٹی لاگو نہیں کی گئی تھی اورصرف کال پر 75پیسے ڈیوٹی عائد کر دی گئی تھی۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.