ان موٹر سائیکل والوں کو اب پٹرول نہیں ملے گا ، واضح اعلان کردیا گیا

بغیر ہیلمٹ موٹرسائیکل سواروں کو پیٹرول فروخت کرنے پر دوبارہ پابندی عائد کر دی گئی۔اس حوالے سے ڈپٹی کمشنر حمزہ شفقات نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ موٹر سائیکل حادثات میں اضافے کے باعث پیٹرول پمپس پر بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل سواروں کو پیٹرول فروخت کرنے پر دوبارہ پابندی عائد کی جا رہی

 

 

 

 

ہے۔مجسٹریٹس آج اسلام آباد میں پٹرول پمپس کا معائنہ کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اسلام پولیس روڈ پر انسپکشن جاری رکھے گی۔ خیال رہے کہ اس حوالے سے لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے بھی احکامات جاری کیے گئے تھے۔27 دسمبر 2018ء کو لاہور ہائیکورٹ کے جج جسٹس علی اکبر قریشی نے بغیر ہیلمٹ موٹر سائیکل سواروں کو پٹرول فراہم کرنے والے پمپس کو سیل کرنے کا حکم دیا تھا ۔سماعت کے دوران جسٹس علی اکبر قریشی نے کہا کہ پنجاب بھر میں بغیر ہیلمٹ کے موٹر سائیکل سواروں کو پٹرول فراہم نہ کیا جائے۔ عدالتی احکامات کی خلاف ورزی کرنے والے پٹرول پمپس کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔ قبل ازیں لاہور ہائیکورٹ نے یکم دسمبر سے موٹرسائیکل سوار دونوں افراد پر ہیلمٹ کی پابندی لازمی قرار دی تھی۔ موٹرسائیکل سواروں کے لیے پابندی عائد کی گئی تھی کہ وہ ہیلمٹ کے ساتھ سائیڈ مرر بھی لگائیں۔جبکہ لاہور اور راولپنڈی میں بغیر ہیلمٹ موٹرسائیکل سواروں کے خلاف کاروائی کا آغاز بھی گذشتہ برس دسمبر میں ہی کر دیا گیا تھا۔ ہیلمٹ کی پابندی کے بعد ہیلمٹ کی مہنگے داموں فروخت کا سلسلہ شروع ہو گیا جو لاہور ہائیکورٹ کے نوٹس میں بھی لایا گیا جس کے بعد لاہور ہائیکورٹ نے موٹر سائیکل ہیلمٹ کے ساتھ فروخت کرنے کے احکامات بھی جاری کیے تھے اور عدالت نے مہنگے داموں ہیلمٹ فروخت کرنے سے بھی روک دیا تھا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.